خواب میں فرشتوں کو دیکھنے کی تعبیر

تمام فرشتوں میں سے چار فرشتے جبرائیل علیہ السلام، میکائیل علیہ السلام، اسرافیل علیہ السلام اور عزرائیل علیہ السلام بزرگ ترین ہیں۔

فرشتوں کو خواب میں دیکھنے کی تاویل و تعبیر

حضرت جبرائیل علیہ السلام

حضرت ابن سیرین رحمتہ اللہ تعالی علیہ نے فرمایا ہے۔ کہ اگر کوئی شخص حضرت جبرائیل علیہ السلام کو خوش طبع اور کشادہ رو دیکھے۔ تو دلیل ہے کہ دشمن پر فتح پاۓ گا اور اپنی مراد کو پہنچے گا اور اگر اس کے خلاف دیکھے تو اندوہ اور غم پر دلیل ہے۔

اور اگر خواب میں دیکھے کہ اس کو جبرائیل علیہ السلام نے خوش خبری دی ہے۔ یا نیک وعدہ کیا ہے یا کسی کام سے روکا ہے۔ عزت اور دولت اور جمعیت خاطر کی دلیل ہے اور اگر اس کو کوئی چیز دی ہے تو بادشاہ سے مرتبہ ملے گا اور بعض تعبیر بیان کرنے والے کہتے ہیں۔

کہ اگر خواب میں جبرائیل علیہ السلام نے اس کو کچھ دیا ہے تو یہ خوف اور بڑی دہشت کی دلیل ہے اگر لوگ اس کو خواب میں کہیں کہ تو جبرائیل ہے تو یہ دلیل ہے کہ سخن دان فصیح ہو گا اور مراد پاۓ گا اور باامانت اور بادیانت مشہور ہو گا۔

حضرت میکائیل علیہ السلام

اگر کوئی شخص خواب میں میکائیل علیہ السلام کو دیکھے ، جیسے کہ ان کی صورت ہے۔ دلیل خیر اور بشارت کی ہے۔ کیونکہ جبرائیل علیہ السلام خواب کے لانے والے اور میکائیل علیہ السلام بشارت اور نعمت وغیرہ کے لانے والے ہیں۔

حضرت ابن سیرین نے فرمایا ہے۔ کہ اگر خواب میں دیکھے کہ حضرت میکائیل نے اس کو عطا دی ہے۔ یہ خیر اور بزرگی کی دلیل ہے اور اگر خواب میں دیکھے کہ لوگ اس کو میکائیل کہتے ہیں۔ دلیل ہے کہ اس سے لوگوں کو خیر اور بشارت پہنچے گی اور نہایت قدر و منزلت پاۓ گا۔

حضرت اسرافیل علیہ السلام

حضرت ابن سیرین رحمتہ اللہ علیہ نے فرمایا ہے کہ اگر کوئی شخص حضرت اسرافیل علیہ السلام کو ان کی صورت پر دیکھے تو یہ قوت اور بزرگی اور جاہ و جلال اور علم و دانش کی دلیل ہے اور جس ملک میں دیکھے اس کی آبادی اور امن کی دلیل ہے۔ اور نرسنگا پھونکتے دیکھے تو یہ بلا اور فتنے کی دلیل ہے۔

فرمان حق تعالے ہے : نرسنگا پھونکا جاۓ گا اور جو شخص آسمانوں اور زمین میں ہے، بچھڑ جائے گا۔

اور اگر دیکھا کہ آپ کے ہاتھ میں نرسنگا ہے اور پھونکتے نہیں ہیں۔ دلیل ہے کہ شہر میں بلا اور فتنہ اور نہایت خوف پڑے گا اور اگر دیکھے کہ اسرافیل علیہ السلام اس کے گھر میں آۓ اور سوتا ہوا جاگ پڑا ہے، دلیل ہے کہ اس شہر کا بادشاہ اس پر خفا ہو گا۔
حضرت کرمانی رحمتہ اللہ علیہ نے فرمایا ہے کہ اگر اسرافیل علیہ السلام کو کوئی شخص خواب میں دیکھے کہ اندوہ گین صور پھونکتے ہیں اور اس نے بطور برکت صورت کی آواز سنی ہے تو دلیل ہے کہ اس ملک میں مرگ پڑے گی اور ظالم لوگ ہلاک ہوں گے اور اگر دیکھے کہ اسرافیل علیہ السلام تازہ روی اور خوشی کے ساتھ اس کی طرف دیکھتے ہیں۔

تو اس امر کی دلیل ہے کہ اس کو بادشاہ سے امن اور خیر پہنچے گا اور اگر دیکھے کہ اسرافیل علیہ السلام نے چٹھی پر مہر لگا دی ہے تو دلیل ہے کہ اس کی موت قریب ہے اور اگر دیکھے کہ اسرافیل علیہ السلام نے اس پر آوازہ کسا اور غائب ہو گئے دلیل ہے کہ اس کو بادشاہ کی طرف سے نقصان پہنچے گا۔

حضرت عزرائیل علیہ السلام

حضرت ابن سیرین رحمتہ اللہ علیہ نے فرمایا ہے کہ اگر کوئی ملک الموت کو آسمان پر اور اپنے آپ کو زمین پر دیکھے تو دلیل ہے کہ وہ شخص اپنے کام سے معزول ہو گا اور اگر اپنے پاس دیکھے تو دلیل ہے کہ اس کی موت قریب ہے۔

اور اگر ملک الموت کو خوش دیکھے تو شہادت کی دلیل ہے اور اگر ملک الموت سے کشتی کی اور گر پڑا تو دلیل ہے کہ دنیا سے جلدی رخصت ہو گا اور اگر ملک الموت کو گرا لیا تو بعض تعبیردان بیان کرتے ہیں کہ بیمار ہو گا لیکن شفاء پاۓ گا۔

حضرت جابر مغربی رحمتہ اللہ علیہ نے فرمایا ہے کہ جو کوئی ملک الموت کو خواب میں خرم و شاداں دیکھے تو دلیل ہے کہ اس کی زندگی دراز ہو گی اور اگر سلام کرتا ہوا دیکھے تو یہ شہادت پاۓ گا اور اگر شیرینی دیتا دیکھے تو جان آسانی سے نکلے گی اور اگر غصہ میں دیکھے تو اس کی موت خطرناک ہو گی۔

اور اگر کوئی تلخ چیز دیتا ہوا دیکھے تو اس کی جان مشکل سے نکلے گی اور اگر خواب میں لوگ اس کو خبر دیں کہ ملک الموت فلاں جگہ ہے اور وہ دور سے دیکھے تو دلیل ہے کہ اس کو بادشاہ سے کام پڑے گا اور اگر خواب میں دیکھے کہ اس نے ملک الموت کو مار ڈالا ہے تو دلیل ہے کہ یہ شخص دشمن خلق ہو گا۔

حاملان عرش کا دیکھنا

حاملان عرش وہ فرشتے ہیں کہ جنہوں نے اللہ تعالے کے امر سے عرش الہی کو اٹھایا ہوا ہے۔ اگر کوئی ان کو خواب میں دیکھے تو مراد پاۓ اور بادشاہ بنے اور اگر ان سے ملاقات کی ہے تو کسی بزرگ بادشاہ سے کام پڑے گا اور خیر و منفعت دیکھے گا۔

حضرت ابراہیم کرمانی رحمتہ اللہ علیہ نے فرمایا ہے کہ خواب میں حاملان عرش کو دیکھنے والا دین داروں سے ملے گا اور حج کرے گا۔ فرمان حق تعالے ہے : اور تو فرشتوں کو عرش کے گرد صف باندھے دیکھے گا کہ وہ اپنے رب کی حمد کے ساتھ تسبیح کرتے ہیں۔

اور اگر فرشتے اس پر مہربانی کریں اور عبادت میں اپنے ساتھ شریک کریں تو یہ اس بات کی دلیل ہے کہ اس کی موت قریب آگئی ہے۔

کراما” کاتبین کا دیکھنا

کراما” کا تین وہ فرشتے ہیں کہ سب لوگوں کے کردار اور گفتار نیک اور بد کو لکھتے ہیں۔ حضرت ابن سیرین رحمتہ اللہ علیہ نے فرمایا ہے کہ اگر کوئی شخص ان کو خواب میں دیکھے۔ اگر نیک ہے تو دونوں جہان میں خیر اور صلاح پاۓ گا اور اگر مفلس ہے تو غم اور اندوہ اٹھاۓ گا۔ فرمان حق تعالے ہے : يعلمون ما تفعلون (وہ تمہارے فعلوں کو جانتے ہیں)۔

اگر ان فرشتوں کو آپس میں لڑتے دیکھے تو یہ دلیل ہے کہ یہ شخص گنہگار اور نافرمان ہے اور عذاب خدا کا مستحق ہے۔ فرمان باری تعالی ہے : ہم تجھے ایک لڑکے کی بشارت دیتے ہیں جس کا نام یحیحیٰ ہے۔

اور اگر فرشتوں کو دیکھے کہ کسی چیز کے لینے کے منتظر ہیں تو دلیل ہے کہ اس کے مال اور نعمت میں زوال آۓ گا اور اگر فرشتوں کو کسی جگہ کھڑا دیکھے تو وہاں امن ہو گا اور اگر لڑائی میں دیکھے تو دشمن پر کامیاب ہو گا۔

اور اگر رکوع و سجود میں دیکھے تو یہ دلیل ہے کہ اس کے دنیا اور دین کے احکام احوال مستقیم پر ہیں اور اگر فرشتوں کو عورتوں کی شکل میں دیکھے تو یہ دلیل ہے کہ خواب دیکھنے والا خدا تعالے پر جھوٹ لگاتا ہے۔ فرمان حق تعالے ہے : کیا خدا تعالے نے تمہیں بیٹے دیئے اور خود بیٹیاں لیں، تم ایک بہت بڑی بات کہتے ہو۔

اور اگر خواب میں دیکھے کہ پر رکھتا ہے اور فرشتوں کے ساتھ اڑتا ہے تو اس کی موت قریب ہے اور دنیا سے توبہ کر کے مرے گا اور اگر دور سے فرشتوں کو دیکھے اور ان کے قریب نہیں جا سکتا ہے تو اس پر مصیبت پڑنے کی دلیل ہے۔ فرمان حق تعالے ہے: فرشتوں کو دیکھیں گے، اس دن گنہگاروں کے لئے خوشی نہیں ہے) اور اگر دیکھے کہ فرشتے اس کو اپنی اطاعت کا امر فرماتے ہیں۔ اگر نیک ہے تو شادی اور خوشی دیکھے گا اور اگر برا ہے تو رنج و غم دیکھے گا۔ فرمان حق تعالے ہے : اپنی کتاب پڑھ۔ آج کے دن تیرا نفس ہی تجھ پر حساب لینے کے لئے کافی ہے۔

اور اگر خواب میں دیکھے کہ فرشتے اس کو عزت کے ساتھ سلام کرتے ہیں تو دلیل ہے کہ دشمن پر فتح پاۓ گا اور انجام بخیر ہو گا اور اگر ان کو ایک جگہ اترے ہوۓ دیکھے تو دلیل ہے کہ وہاں کے لوگ غم اور اندوہ سے نجات پائیں گے۔ کیونکہ فرشتے ہمیشہ پیغمبروں کی مدد کے لئے آۓ ہیں۔ حضرت کرمانی رحمتہ اللہ علیہ فرماتے ہیں صاحب خواب کا فرشتوں کو دیکھنا پند اور نصیحت ہے۔

اور اگر فرشتے کو وصیت کرتے دیکھے تو یہ شخص شہید ہو گا اور اگر مقرب فرشتوں کو کسی جگہ میں دیکھے کہ اس جگہ اہل اسلام کافروں کے ساتھ جنگ کرتے ہیں، تو اہل اسلام کو فتح ہو گی اور اگر اس جگہ رنج، قحط اور سختی ہو گی تو اللہ تعالے اس جگہ والوں کو اس سے نجات دے گا۔

اور اگر دیکھے کہ فرشتہ بن کر آسمان کو چلا گیا ہے تو دلیل ہے کہ یہ شخص دنیا میں زہد اختیار کرے گا اور دنیا سے دستبردار ہو کر راہ آخرت تلاش کرے گا اور اگر دیکھے کہ فرشتوں کے ساتھ آسمان پر چلا گیا ہے اور واپس نہیں آیا ہے تو جلدی دنیا سے سفر کرے گا اور اپنا نیک نام چھوڑے گا۔ حضرت جابر مغربی رحمتہ اللہ علیہ نے فرمایا ہے کہ اگر خواب میں دیکھے کہ مقرب فرشتہ عزت کے ساتھ اس کی طرف دیکھتا ہے تو وہ شخص بیماری سے جلد شفاء پاۓ گا اور اس کے بعد حج اور جہاد کرے گا اور بہت سے نیک کام کرے گا۔

اور اگر اپنے آپ کو فرشتے کی صورت پر دیکھے تو دلیل ہے کہ غم اور قرض سے نجات پاۓ گا اور اگر مالدار ہے تو مال زیادہ ہو گا اور اگر درویش ہے تو غنی ہو گا۔ حضرت جعفر صادق رضی اللہ تعالے عنہ نے فرمایا ہے کہ اگر خواب میں دیکھے کہ فرشتہ اس کو کسی کام کی بشارت ہے تو یہ دلیل ہے کہ کوئی بزرگ آدمی اس کو کسی کام پر لگاۓ گا۔

اور اگر دیکھے کہ فرشتہ اس کو عطا دیتا ہے تو وہ شخص عطا اور بزرگی پاۓ گا اور اگر فرشتہ کروبی کو استقبال کرتا دیکھے گا تو دونوں جہان کی دولت پاۓ گا اور اگر دیکھے کہ فرشتے اس کی زیارت کو آۓ ہیں اور شمع اور چراغ ان کے پاس ہیں تو دلیل ہے کہ اس کے یہاں دانا اور عالم فرزند آۓ گا اور اگر دیکھے کہ فرشتے اس کو سفید یا سبز کپڑے دیتے ہیں تو دلیل ہے کہ وہ خود مرے گا یا اس کے عزیزوں میں سے کوئی مرے گا اور اگر دیکھے کہ اس کی طرف خوشی سے دیکھتے ہیں تو اس کا انجام بخیر ہو گا اور اگر خواب میں فرشتہ جامع قرآن دے یا خط لکھا ہوا دے تو دلیل ہے کہ کوئی شخص اس پر حکومت کرے گا اور اس پر غالب آ جاۓ گا۔