اللہ تعالیٰ کو خواب میں دیکھنے کی تعبیریں

اللہ تعالیٰ وہ ذات پاک ہے جسکا کوئی مثل نہیں اور وہی ہر وقت دیکھنے اور سننے والا ہے۔ خواب میں اللہ کے دیدار کی مختلف تعبیر میں انسان کے مختلف احوال کے اعتبار سے ہوسکتی ہیں۔ پس جو شخص اللہ تعالی کا دیدار اس کے جاہ وجلال کے ساتھ بغیر کسی تشبیہ تمثیل کے کرے تو یہ خیر کی دلیل ہے اور اس کے دین و آخرت کی سلامتی کی بشارت ہے۔ اگر دیدار الہی مذکورہ حالت کے خلاف کیا تو میں اس کی خبس باطن پر دال ہے خاص کر اس صورت میں کہ اللہ تعالی اس سے کلام نہ کرے۔

اگر مریض حالت مرض میں دیکھے تو اس کا انتقال ہو جائیگا اس لئے کہ اللہ تعالی کے ناموں میں سے ایک نام حق ہے اور موت بھی حق ہے۔ اور اگر راہ گم کردہ خواب میں اللہ کے دیدار سے مشرف ہو جائے تو راہ راست پائیگا اس لئے کہ اس نے حق کو دیکھا ہے۔ اور اگر مظلوم خواب میں دیکھے تو اپنے دشمنوں پر غلبہ حاصل کر لے گا۔ خواب میں کلام الہی بغیر تشبیہ کے سننا خواب دیکھنے والے کی گمراہی کی طرف مشیر ہے۔ اور بعض دفعہ اللہ تعالی کا کلام سنا خوف سے امن اور اپنے مقصد کو پہنچنے پر دال ہے۔

اور بسا اوقات اللہ تعالی کو دیکھے بغیر پس پردہ کلام سننا رفع منزلت کی طرف مشیر ہوگا۔ بطور خاص اگر کلام وحی کی صورت میں ہو۔ اور بعض دفعہ یہی خواب دیکھنے والے کے گمراہ اور بدعتی ہونے پر دال ہوگا۔ اور بعض دفعہ اسکی تعبیر اپنی حیثیت کے مطابق درجہ پانے سے کی جاتی ہے خصوصا جب کہ خواب دیکھنے والے کے پاس اللہ کا پیغام رساں آ جائے۔

allah taala ko khwab me dekhna tabeer

اگر کوئی شخص اللہ تعالی کو کسی مکان میں ایسی صورت میں دیکھے کہ اس کی توصیف اور تعریف کی جاسکتی ہو تو دلیل ہے کہ دیکھنے والا ان لوگوں میں سے ہے جو اللہ پر جھوٹ باندھتے ہیں اور اللہ کی طرف ایسی بات کو منسوب کر تے ہیں جو اللہ تعالی کی شایان شان نہیں۔
جس شخص نے اللہ تعالی کو اپنے سے ہم کلام دیکھا اور اس میں اللہ تعالی کی طرف دیکھنے کی طاقت بھی ہے تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ اللہ تعالی اس کے ساتھ رحمت کا معاملہ فرمائیں گے اور اپنی نعمت اس پر مکمل کر میں گے۔ جس نے دیکھا کہ اللہ اس کی طرف نظر کر رہے ہیں تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ اللہ تعالی قیامت کے دن اس کی طرف نظر کرم فرمائیں گے۔

جس نے دیکھا کہ اللہ تعالی کا اس پر نزول ہوا۔ اگر وہ وہاں نماز پڑھ رہا ہے تو تعبیر یہ ہے کہ وہ رحمت خداوندی سے بہرہ ور ہو گا اگر شہادت کا طالب ہے تو شہادت نصیب ہوگی۔اور اپنے دنیاوی اور اخروی مقصد کو پائے گا۔ جس نے دیکھا گویا کہ اللہ تعالی اس کے ساتھ معانقہ کر رہا ہے یا اس کو یا اس کے کسی عضو کو بوسہ دے رہا تو دلیل کہ وہ اپنے مطلوبہ ا جر کو پائے گا۔ اگر کسی نے دیکھا کہ اللہ تعالی نے اسے متاع دنیا میں سے کچھ دیدیا تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ اس کو کوئی مصیبت یا بیماری لاحق ہوگی اور اس سے اس کا اجر وثواب دو چند ہو گا اور شہرت ہوگی۔

اگر کسی نے دیکھا کہ اللہ تعالی خواب میں اس سے مغفرت یا دخول جنت یا کسی اور چیز کا وعدہ کر رہے ہیں۔ تو دلیل ہے کہ وہ شخص ہمیشہ اللہ تعالیٰ سے ڈرتا رہیگا۔ اور اللہ کی طرف متوجہ رہے گا۔ اگر کسی نے خواب میں اللہ کو دیکھا مگر اس میں اللہ تعالی کی طرف دیکھنے کی طاقت نہیں یا عرش یا اللہ کی کرسی کو اللہ کے بغیر دیکھ لے تو اس کی تعبیر ہے کہ وہ شخص نیک عمل کر یگا۔

اگر کوئی خواب دیکھے گو یا اللہ تعالی سے ہم کلام ہے اور اس میں اللہ کی طرف دیکھنے کی قدرت بھی ہے یا اللہ تعالی کو عرش یا کرسی کے ساتھ دیکھے تو دلیل ہے کہ اسے خیر حاصل ہوگی اور علم میں اضافہ ہوگا۔ اگر کسی نے خواب دیکھا کہ اللہ تعالی اس کواپنی طرف بلا رہا ہے اور وہ دور بھاگ رہا ہے تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ خواب دیکھنے والا اگر عابد ہے تو عبادت واطاعت سے پھر جائے گا۔ اگر اس کا والد زندہ ہے تو وہ اس کا نافرمان ہوگا اور اگر خواب دیکھنے والا کسی کا غلام ہے تو وہ اپنے ما لک سے بھاگ جائے گا۔

اگر کسی نے دیکھا گویا کہ اللہ تعالی اور اس کے درمیان پردہ حائل ہے تو تعبیر یہ ہے کہ وہ گناہ کبیرہ میں مبتلا ہوگا اور گناہوں کا مرتکب ہوگا۔ اگر کسی نے خواب میں اللہ تعالی کو ناراضگی اور غصہ کی حالت میں دیکھا یا اللہ تعالی کے نورکو برداشت کر نے سے قاصر رہا یا خوف زدہ یا لرزہ براندام ہوا یا اللہ تعالی سے اپنے گناہوں سے معافی توبہ اور مغفرت کی درخواست کی تو یہ گناہوں کے ارتکاب اور بدعت کی دلیل ہے۔

اگر کوئی شخص خواب میں دیکھے کہ اللہ اس سے کلام کر رہا ہے تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ اللہ اس کو ڈرا رہے ہیں اور گناہوں سے اسے روک رہے ہیں۔ اگر کسی نے دیکھا کہ گویا اللہ اس کو حدیث بیان کر رہا ہے تو تعبیر یہ ہے کہ صاحب خواب تلاوت قرآن کثرت سے کریگا۔ اگر کسی نے خواب دیکھا کہ اللہ تعالی اس سے بات چیت کر رہے ہیں اور وہ اللہ کے کلام کو سمجھ رہا ہے تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ کوئی بادشاہ یا حاکم اس سے کلام کر ے گا۔ اور اگر اللہ کے کلام کو نہیں سمجھ رہا تو تعبیر اس کے مطابق ہوگی۔

اگر کسی نے خواب میں اللہ تعالی کو اپنے سر پر دست مبارک رکھے دیکھا تو تعبیر یہ ہے کہ اللہ تعالی اس کواپنے مخصوص بندوں میں شامل کر کے اپنا مقرب بنائے گا لیکن مصائب مرتے دم تک اس سے نہیں ہٹائے گا۔ اگر کسی نے اللہ تعالی کو اپنے والد بھائی کسی رشتہ دار کی صورت میں اپنے ساتھ مہربانی کرتے ہوئے دیکھا تو تعبیر یہ ہے کہ اس کو کوئی ایسی مصیبت لاحق ہوگی جس پر اللہ تعالی اس کے لئے اجر عظیم عطا کر دیگا۔

اگر خواب میں اللہ تعالی کو کسی مقام یا کسی گھر میں ظہورفر ما تا ہوا دیکھے یا کسی جگہ شہر یا مکان میں نازل ہوتا ہوا دیکھے تو تعبیر اس کی یہ ہے کہ وہ علاقے مکان اور جگہیں عدل سے معمور ہوں گی اللہ تعالی کے حکم سے خوشحالی اور خیر و برکت کی بہتات ہوگی۔

اللہ تعالی کا نا راضگی کی حالت میں ظہور ہونا اس علاقے کے لئے بر بادی اور اہل علاقہ کے لئے ہلاکت مصائب و آلام و امراض مختلفہ میں مبتلا ہونے کی دلیل ہے۔ اگر کسی نے خواب میں اللہ تعالی کو کسی غمزدہ محبوس و مقید شخص کے پاس دیکھا تو یہ اس شخص مکروب و محبوس کے لئے نجات کی علامت ہے۔

اگر کسی نے اپنے آپ کو خواب میں اللہ تعالی سے سرگوشی کرتے ہوۓ دیکھا تو یہ اللہ کے ہاں اسکے مقرب ہونے کی دلیل ہے جیسا کہ خواب میں اللہ تعالی کے سامنے سجدہ ریز ہونا مقرب الہی ہونے کی علامت ہے۔ اگر کسی نے خواب دیکھا کہ گویا وہ اللہ تعالی سے پس پردہ بات چیت کر رہا تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ اس کا دین اچھا ہوگا۔اگر اس کے پاس کسی کی امانت ہے تو اس کو ادا کر یگا اور اگر حکومت ہے تو وہ مضبوط ہو جائیگی اور اگر بغیر حجاب کے اللہ سے بات کر رہا تو اس کے دین کے نقصان کی دلیل ہے۔

اور اگر اللہ تعالی خواب میں اسے کچھ پہنا میں تو یہ زندگی بھرغم و تکلیف پہنچنے کی دلیل ہے۔مگر اس مصیبت و مرض کی وجہ سے اجر عظیم اسکو ملے گا۔ اگر کسی نے خواب میں دیکھا کہ گویا اللہ تعالی اس کو اس کے نام یا اور کسی نام کے ساتھ موسوم کر رہے تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ اپنے معاملے میں کامیاب ہوگا اوردشمنوں پر غلبہ پائے گا۔ اگر کسی نے دیکھا کہ اللہ تعالی اس سے ناراض ہیں تو یہ والدین کی ناراضگی کی علامت ہے اور یہ دیکھے گویا اس کے والد ین اس سے ناراض ہیں تو یہ اللہ تعالی کی ناراضگی کی دلیل ہے۔

اگر کسی نے خواب دیکھا کہ اللہ تعالی اس پر غضبناک ہیں تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ وہ کسی اونچے مکان سے گرے گا۔ اگر کسی نے دیکھا کہ وہ کسی دیوار مکان یا پہاڑ سے گر گیا تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ اللہ تعالی اس شخص سے ناراض ہے۔

اگر کسی جگہ صورت ( مورت ) دیکھے اور اس سے کہا جائے کہ میں تمہارا معبود ہے اور وہ اس کو معبود سمجھ کر اس کی عبادت بھی کرے اور اس کے سامنے سجدہ ریز ہو تو میں دلیل ہے کہ وہ کسی باطل کام میں منہمک ہے اور اپنی دانست میں اس کو حق سمجھ رہا ہے۔ اگر کسی نے اللہ تعالی کوکسی مقام میں نماز پڑھتے ہوۓ دیکھا تو یہ اس مقام یا جگہ کے لیے رحمت خداوندی کی آمد کی دلیل ہے۔ اگر کسی نے دیکھا کہ اللہ تعالی اس کی تقبیل فرما رہے ہیں اور خواب دیکھنے والا صاحب خیر اور صالح ہے تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ وہ اللہ تعالی کی اطاعت تلاوت کلام پاک یا تدریس قرآن کریم سے بہرہ مند ہو گا اگر خواب دیکھنے والا مذکورہ صفت سے عاری ہے تو یہ اس کے گمراہ اور بدعتی ہونے کی دلیل ہے۔

اگر کسی نے خواب دیکھا کہ اللہ تعالی اس کو آواز دے رہے ہیں اور وہ اس کا جواب دے رہا ہے تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ انشاء اللہ حج بیت اللہ سے سرفراز ہوگا۔ کسی مکان مخصوص جگہ میں اللہ کا تجلی فرما نا اگر وہ مکان خراب ہوتو اس مکان کی آبادی کی دلیل ہے اور اگر وہ پہلے سے آباد ہو تو اس کی خرابی کی دلیل ہے۔ اگر اس مکان کے مکین ظلم کرنے والے ہیں تو ان کے لیے سزا کی دلیل ہے اور اگر مظلوم ہیں تو ان کے ساتھ عدل و انصاف کی علامت ہے۔

بسا اوقات کسی مکان مخصوص میں اللہ تعالی کو تجلی فرماتے ہوئے دیکھنا کسی ملک عظیم میں ہونے کی علامت ہے یا پھر اس بات کی دلیل ہے کہ اس کا معاملہ کسی ظالم کے ہاتھ میں ہوگا یا اس مکان میں ایک ایسا عالم پیدا ہوگا جو دوسروں کو فائدہ پہنچائے گا یا اس میں حکیم حاذق پیدا ہوگا جو معالجے میں ماہر ہوگا۔

خواب میں اللہ تعالی سے ڈرنا اطمینان وسکون غناء اور رزق واسع کی دلیل ہے۔ اگر کسی نے دیکھا کہ اللہ تعالی اس کو ڈانٹ رہے ہیں اور دھمکا رہے ہیں تو اس کی تعبیر یہ ہے کہ وہ شخص گناہ کا مرتکب ہوگا۔

Share via
Copy link
Powered by Social Snap